اہم ترین فنگر پرنٹ‌ غیر محفوظ، پاکستان سمیت دنیا کا سب...

فنگر پرنٹ‌ غیر محفوظ، پاکستان سمیت دنیا کا سب سے بڑا ڈیجیٹل اسکینڈل بے نقاب

-


کراچی: اے آر وائی نیوز کے پروگرام سرعام کی ٹیم نے دو ماہ کی مسلسل کوشش کے بعد پاکستان سمیت دنیا کے سب سے بڑے ڈیجیٹل اسکینڈل کو بے نقاب کردیا۔

اے آر وائی نیوز کی رپورٹ کے مطابق اس گروہ کی موجودگی کے بعد یہ کہا جاسکتا ہے کہ  پاکستانیوں کےانگوٹھوں کےنشانات اورنادرا کاڈیٹاغیرمحفوظ ہیں کیونکہ یہ گروہ انگوٹھوں کے نشان (فنگر پرنٹ) چرا کر ربڑ کے تھمب امپریشن بنا کر اپنے مقاصد پورے کرتا تھا۔

گروہ کے مقاصد کیا تھے؟

ربڑ پر انگلیوں کے نشانات بنا کر فون ہیک کرنے ، اےٹی ایم سےپیسہ نکلوانا،سمز لیناسب  کچھ آسان ہے، علاوہ ازیں ٹیلی کام سیکٹر، بینکنگ  سیکٹر، احساس پروگرام جعلسازوں  کے نشانے پر ہے جبکہ شہریوں کے نام پر جعلی موبائل سم کے ذریعے جرائم اور دہشت گردی کا خدشہ بھی ہے۔



پولیس نے انکشاف کیا کہ کئی وارداتوں میں جعلی سمزکےشواہد بھی سامنے آئے ہیں۔اس اسکینڈل کے بے نقاب ہونے کے بعد بائیومیٹرک سسٹم اور نادرا میں موجود کالی بھیڑوں (سہولت کاروں) کی موجودگی کے حوالے سے سوالات بھی پیدا ہوئے ہیں۔

سرعام کی کاوش

اے آر وائی نیوز کے پروگرام سرعام کی ٹیم نے دو ماہ کی مسلسل کوششوں کے بعد جعلی فنگرپرنٹ بنانے والے گروہ کی نشاندہی کی جس کے بعد متعلقہ اداروں نے گلشن معمار میں کارروائی کی اور ارکان کو گرفتار کیا۔

یہ بھی انکشاف سامنے آیا ہے کہ گروہ کےارکان کا تعلق سندھ کے ضلع راجن پور سے ہے، گروہ کے ارکان تھمپ امپریشن سے ربڑ کے انگوٹھے بنالیتے تھے جس کے ذریعے انہوں نے صارفین کے بینک اکاؤنٹس سے اے ٹی ایم سے پیسے بھی نکالے۔

گروہ نے بڑےاکاؤنٹ ہولڈر ز کو نشانے پر رکھا ہوا تھا جبکہ انہوں نے احساس پروگرام اور ٹیلی کام سیکٹرکو بھی نشانہ بنایا، احساس  پروگرام میں رجسٹرڈ خواتین  کےتھمپ امپریشن بنائےگئے۔

ملزمان گرفتار

پولیس کے ہاتھوں گرفتار ہونے والے ملزمان سے احساس پروگرام کے رجسٹرڈ برآمد ہوئے، ملزمان نے انکشاف کیا کہ انہوں نے ربڑ کے انگھوٹھوں کی مدد سے جعلی سمز نکالیں اور فون ہیک کرنے سمیت واٹس ایپ بھی بنائے۔

اے ار وائی سرعام کے اینکر اقرار الحسن نے بتایا کہ یہ پاکستانی سمیت دنیا کا سب سے بڑا دیجیٹل اسکینڈل بے نقاب ہوا ہے کیونکہ فنگر پرنٹس کو دنیا میں اب تک محفوظ سمجھا جارہا تھا۔

اینکر اقرار الحسن 

سرعام کے اینکر اقرار الحسن نے بتایا کہ اس گینگ کو ایک روز قبل کراچی کے علاقے گلشن معمار سے حراست میں لیا گیا، جن کے قبضے ربڑ کے تھمب امرپیشن بھی برآمد ہوئے، یہ دہائی اور سرعام کی 8 سالہ تاریخ کا سب سے بڑا اسکینڈل ہے جسے ہم نے کئی ماہ کی محنت کے بعد بے نقاب کیا۔

اقرار الحسن نے بتایا کہ ملزمان تھمب اپریشن کے ذریعے بینک ٹرانزیکشن کررہے تھے جبکہ انہوں نے احساس پروگرام سے پیسے بھی نکالے۔

Comments



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Latest news

جوبائیڈن نے ٹرمپ کے ایک اور فیصلے کو منسوخ کردیا

واشنگٹن : امریکی صدر جو بائیڈن نے گرین کارڈ جاری کرنے پر پابندی کا فیصلہ واپس لے لیا،...

اپنے خواب کا تعاقب کرتے جیک لیمن کی کہانی

جیک لیمن 8 سال کا تھا جب اس کے دل میں فلم میں کام کرنے کی امنگ پیدا...

Coinbase listing filing shows surge in revenue amid bitcoin boom

Coinbase, the biggest US cryptocurrency exchange, moved a step closer to listing on the Nasdaq with a filing...

نورا فتیحی بالی ووڈ میں شیطان صفت انسانوں کا ذکر کرتے رو پڑیں

 ممبئی: بھارتی اداکارہ نورا فتیحی بالی ووڈ میں شیطان صفت انسانوں کا ذکر کرتے رو پڑیں۔ ایک انٹرویو کے دوران...

لاہور، قبضہ مافیا کا سرپرست پولیس افسر گرفتار

بزرگ شہری پر جھوٹا مقدمہ بھی درج کیا Source link

خاتون کو غلط خون لگانے پر اسپتال کو نوٹس جاری

پنجاب ہیلتھ کیئر کمیشن نے واقعے کا نوٹس لیا Source link

Must read

You might also likeRELATED
Recommended to you